Browse By

وزیرستان، پشاور اور مہمند میں دھماکے

پاکستان کے قبائلی علاقے جنوبی وزیرستان، صوبائی دارالحکومت پشاور اور مہمند ایجنسی میں ہونے والے تین دھماکوں میں سکیورٹی فورسز کے دو اہلکار ہلاک جبکہ نو دیگر افراد زخمی ہوئے ہیں۔

ایک اعلی فوجی اہلکار نے بی بی سی کے نامہ نگار دلاورخان وزیر کو بتایا کہ پہلا دھماکہ اتوار کی صُبح نو بجے جنوبی وزیرستان کے تحصیل سراروغہ کے علاقے زیارت میں اس وقت ہوا جب سکیورٹی فورسز کے اہلکار سڑک کنارے گشت لگار ہے تھے۔انہوں نے کہا کہ اہلکار پیدل تھے اور علاقے میں معمول کے مطابق ایک جگہ سے دوسری جگہ جارہے تھے۔
اہلکار کا کہنا تھا کہ سڑک کے کنارے نصب بارودی مواد کے اس دھماکے میں دو اہلکار ہلاک جبکہ ایک زخمی ہوا ہے۔ لاشوں اور زخمی اہلکار کو جنڈولہ منتقل کردیاگیا ہے۔
واضح رہے کہ یہ واقعہ ایک ایسے موقع پر ہوا ہے جب حکومت نے محسود قبائل کے ہزاروں متاثرین کے واپسی کا عمل شروع کیا ہے۔ تحصیل سرواروغہ کوگزشتہ سال ایک فوجی آپریشن کے بعد لوگوں نے مکمل طور پر خالی کردیاگیا تھا اور اس وقت وہاں کسی قسم کی آبادی موجود نہیں ہے۔
دوسری طرف صوبہ خیبر پختونخواہ کے دارالحکومت پشاور کے نواح میں ایک صوبائی وزیر کے گھر کے قریب باروی سرنگ کے دھماکے میں تین افراد زخمی ہوئے ہیں۔
زخمی ہونے والے صوبائی وزیر کے رشتہ دار بتائے جاتے ہیں۔
پشاور میں پولیس سربراہ لیاقت علی خان نے بی بی سی کو بتایا کہ اتوار کو پشاور سے بیس کلومیٹر دور مشرق کی جانب علاقہ ترناب میں صوبائی وزیر ارباب ایوب جان کے گھر کے قریب اس وقت دھماکہ ہوا جب ان کے رشتہ داروں کی گاڑی ان کے گھر کے باہر نصب بارودی سرنگ سے ٹکرا گئی۔
لیاقت علی خان نے بتایا کہ دھماکے میں تین افراد زخمی ہوئے ہیں جو ارباب ایوب جان کے قریبی رشتہ دار بتائے جاتے ہیں۔
پولیس سربراہ کا کہنا تھا کہ دھماکے سےگاڑی کو نقصان پہنچا لیکن زخمیوں کی حالت خطرے سے باہر ہے
دھماکے کے وقت صوبائی وزیر ارباب ایوب جان گھر کے مہمان خانے میں موجود تھے اور تھوڑی دیر میں اسی راستے سے گُزرنے والے تھے۔ حکام کے مطابق بارودی مواد کو بجلی کے ایک کھمبے سے باندھا گیا تھا اور اس کا وزن دو کلو سے زیادہ تھا۔
اس واقعہ کے بعد پولیس کی بھاری نفری علاقے میں پہنچ گئی ہے لیکن ابھی تک کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی ہے۔
یاد رہے کہ ارباب ایوب جان کا تعلق عوامی نیشنل پارٹی سے ہے اور اس سے پہلے بھی عوامی نیشنل پارٹی کے اہم رہنماؤں پر حملے ہوچکے ہیں جن میں متعدد افراد ہلاک و زخمی ہوئے ہیں۔
ادھر ایک اور قبائلی علاقے مہمند ایجنسی کے تحصیل صافی کے علاقے شیخ بابا میں سکیورٹی فورسز کی ایک بارودی سرنگ سے ٹکراگئی ہے جس کے نتیجہ میں پانچ اہلکار زخمی ہوئے ہیں۔ دھماکے میں گاڑی بھی مکمل طور پر تباہ ہوگئی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *